Islam

اس نے مجھے شکر کرنا سکھا دیا تھا

ابلا دودھ اس میں ٹھنڈا ہونے کے لیے رکھا کرتی تھیں۔ ‏مظہر احمد نے میرے دل کو اُٹھا کر نعمت خانے میں رکھ دیا تھا۔ زندگی کو بھی جیسے اُبال آ گیا تھا

حکومتی ایوانوں سے بزنس کلاس اس کے ٹھمکوں کی زد میں تھے

پولیس آفیسر نے تاریخی جواب دیا
“جس ملک میں ایک شرابی عورت کے اشارے پر ٹرانسفری اور ایک رقاصہ کے حکم پر واپسی ہوتی ہو اس ملک میں کسی غیرت مند کا رہنا عار اور عیب ہے

کاش کسی مسلمان ریاست کے حکمران کی بھی ایسی مثال ہوتی!

محترمہ میرکل کسی دوسرے شہری کی طرح ایک عام اپارٹمنٹ میں رہتی ہیں۔ وہ جرمنی کی چانسلر منتخب ہونے سے پہلے جس ‏اپارٹمنٹ میں رہتی تھیں۔ اس نے اسے آج تک نہیں چھوڑا اور وہ ایک بھی ولا ، مکانات ، تالاب ، باغات کی مالک نہیں ہے۔

کاش کسی مسلمان ریاست کے حکمران کی بھی ایسی مثال ہوتی!